جولٹا نیوز    

خبر سب سے پہلے  

JoltaNews Logo

ہندوؤں کے بھگوان پر زمین پر قبضے کا الزام

ہندوؤں کے بھگوان پر زمین پر قبضے کا الزام

بھارت کی ایک عدالت نے ایک بھگوان پر زمین پر ناجائز قبضہ کرنے کے الزام میں اسے طلب کر لیا ہے۔ مشرقی بھارت کے ریاست بہار میں سڑک کے کنارے بنے ایک مندر میں توسیع کی گئی تو یہ معاملہ گھمبیر ہو گیا۔

مقامی عدالت نے نوٹس جاری کیا ہے کہ ہنو مان بھگوان کے اس مندر میں توسیع کی وجہ سے زمین پر ناجائز قبضہ کیا گیا ہے۔ عدالت میں دائر کیے ایک مقدمے میں شکایت کی گئی ہے کہ روہتاس میں قائم اس مندر میں توسیع کی وجہ سے ٹریفک متاثر ہو رہی ہے۔

درخواست گزار کا کہنا ہے کہ مقامی آبادی کی سہولت کی خاطر اس مندر میں کی جانے ولی توسیع کو ختم کر دیا جائے۔ تاہم مقامی ہندوؤں نے اپنے بھگوان کی توہین پر احتجاج بھی شروع کر دیا ہے۔

روہتاس کے ڈپٹی ڈویلپمنٹ کمشنر نے کہا ہے کہ عدالت نے سمن دراصل اس مندر کی انتظامیہ کو جاری کیا ہے نہ کہ بھگون ہنومان کو۔

بھارت میں زمینوں پر ناجائز قبضہ ایک معمول کی بات ہے، جہاں مذہبی گروہ مندروں اور دیگر مقدس مقامات کی تعمیر سے ایسی زمینوں پر بھی قبضہ کر لیتے ہیں، جو ان کی نہیں ہوتیں۔ تاہم بھارت کے قدامت پسند معاشرے میں اس تناظر میں سوال اٹھانا مناسب خیال نہیں کیا جاتا۔

loading...