جولٹا نیوز    

خبر سب سے پہلے  

JoltaNews Logo

سعودی عرب: کرپشن کے الزام میں 11 شہزادے اور درجنوں وزرا گرفتار

سعودی عرب: کرپشن کے الزام میں 11 شہزادے اور درجنوں وزرا گرفتار

ریاض: سعودی عرب کی حکومت نے کرپشن اور منی لانڈرنگ کے الزامات کے تحت 11 شہزادوں اور درجنوں وزرا کو گرفتار کر لیا ہے جن میں کھرب پتی شہزادہ ولید بن طلال بھی شامل ہیں۔

غیر ملکی خبررساں ایجنسی کے مطابق سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی سربراہی میں شاہی فرمان پر کریک ڈاؤن دیکھنے میں آیا جس کا آغاز نئے اینٹی کرپشن کمیشن کے قیام کے بعد ہوا۔

کمیٹی نے کرپشن کےالزام میں 11 شہزادوں اور 38 موجودہ اور سابق وزرا گرفتار کیا۔

اطلاعات کے مطابق جزیرہ نما عرب کے امیر ترین شخص اور سعودی شاہی خاندان کے فرد شہزادہ الولید بن طلال بھی ان گرفتار افراد میں شامل ہیں تاہم ان کی گرفتاری کی تصدیق نہیں ہوسکی۔

خیال رہے کہ 62 سالہ شہزادہ الولید بن طلال کا شمار دنیا کے امیر ترین شخصیات میں ہوتا ہے جو سال 2000 سے 2006 تک دنیا کے 10 امیر ترین شخصیات کی فہرست میں شامل رہے جبکہ 2004 میں وہ دنیا کے چوتھے امیر ترین شخص تھے۔ فوربز میگزین کے مطابق ان کی دولت کا تخمینہ 32 ارب ڈالرز ہے۔

ولید بن طلال نے کچھ عرصہ پہلے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ان کا نیو یارک میں واقع پلازہ ہوٹل خریدا تھا ، وہ ایک مہنگی کشتی بھی ٹرمپ سے خرید چکے ہیں۔

loading...